محمد VI مراکشی
(عربی وچ: محمد السادس بن الحسن ویکی ڈیٹا اُتے (P1559) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن
 

جم 21 اگست 1963 (61 سال)[۱][۲][۳]  ویکی ڈیٹا اُتے (P569) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن


رباط   ویکی ڈیٹا اُتے (P19) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن

وفات

شہریت مراکش   ویکی ڈیٹا اُتے (P27) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن
نسل عربی [۴]،  بربر [۴]  ویکی ڈیٹا اُتے (P172) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن
زوجہ شہزادی لالہ سلمی   ویکی ڈیٹا اُتے (P26) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن
اولاد لالہ خدیجہ ،  مولای حسن   ویکی ڈیٹا اُتے (P40) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن
والد حسن ثانی   ویکی ڈیٹا اُتے (P22) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن
بہن/بھائی
شہزادی لالہ مریم آف مراکش   ویکی ڈیٹا اُتے (P3373) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن
خاندان علوی شاہی سلسلہ   ویکی ڈیٹا اُتے (P53) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن
مناصب
شاہ مراکش   ویکی ڈیٹا اُتے (P39) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن
آغاز منصب
۲۳ جولائی ۱۹۹۹ 
حسن ثانی  
 
عملی زندگی
مادر علمی جامعہ محمد وی (–۱۹۸۵)

کالج رائل (–جون ۱۹۸۱)  ویکی ڈیٹا اُتے (P69) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن
تخصص تعلیم قنون   ویکی ڈیٹا اُتے (P69) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن
تعلیمی اسناد Licentiate ،baccalauréat   ویکی ڈیٹا اُتے (P69) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن
پیشہ بادشاہ ،  شاہی حکمران   ویکی ڈیٹا اُتے (P106) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن
مادری زبان عربی   ویکی ڈیٹا اُتے (P103) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن
پیشہ ورانہ زبان عربی [۵]،  انگریزی [۶]،  فرانسیسی [۵]،  سپینی [۵]  ویکی ڈیٹا اُتے (P1412) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن
اعزازات
 آرڈر آف دی نیل (۲۰۰۲)

 سِلور اسٹار (۲۰۰۲)

اعزازی ڈاکٹریٹ (۲۰۰۰)

 گرینڈ کراس آف دی لیگون آف ہانر (۲۰۰۰)

 نائٹ گرینڈ کراس آف آرڈر آف میرٹ جمہوریہ اطالیہ (۱۹۹۷)[۷]

 نائیٹ گرینڈ کراس آف دی رائل وکٹورین آرڈر (۱۹۸۰)

 نشان عبد العزیز السعود

 قومی اعزاز مڈغاسکر

 آرڈر آف دی ریپبلک آف سربیا

 مبارک الکبیر اعزاز

 نشان پاکستان

 نشان جمہوریہ   ویکی ڈیٹا اُتے (P166) د‏‏ی خاصیت وچ تبدیلی کرن
محمد ششم شاہ مراکش

محمد چھیواں (عربی: محمد السادس) مراکش دا موجودہ بادشاہ اے۔ اوہ 1963 میں پیدا ہوئیا تے جولائی 1999 توں تخت سلطنت اتے بیٹھیا اے۔ اوہ خاندان علویہ دا 18 واں حکمران اس جو 1666 توں مراکش اتے حکمران اے۔ مراکشی آئین دے تحت اسنوں امیر المؤمنین دا لقب وی حاصل اے۔[۸][۹][۱۰][۱۱]

وہ رباط میں پیدا ہوا تھا جو اپنی بیوی سے شاہ حسن ثانی کے مرد بچوں میں سب سے بڑا تھا۔ اچھی ساس، لہذا، وہ اپنی پیدائش کے بعد سے ہی تخت اور ولی عہد کے واضح وارث تھے، جیسا کہ آئین میں درج ہے، اس نے اپنی تعلیم کا آغاز چار سال کی عمر میں شاہی محل سے منسلک قرآنی مصنفین سے کیا جب کہ اس نے اسے بیرون ملک مکمل کیا۔ فرانسیسی یونیورسٹی (Nice Sophia Antipolis) سے آنرز کے ساتھ قانون میں ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کی۔

شاہ محمد ششم علوی خاندان کا ایک رکن ہے جس کا سلسلہ نسب حسن بن علی بن ابی طالب سے ملتا ہے، جس نے 1666 عیسوی سے مراکش پر حکومت کی ہے۔ بن الحسین، اردن کے بادشاہ، اور شاہ حماد بن عیسیٰ الخلیفہ، بحرین کے بادشاہ . 2009 میں شائع ہونے والی اور بین الاقوامی محققین اور ماہرین کی نگرانی میں شائع ہونے والی ایک تحقیق کے مطابق شاہ محمد ششم کا شمار دنیا کی پچاس بااثر اسلامی شخصیات میں ہوتا ہے۔ شاہ محمد ششم نے یورپی مراکش تعاون پر ایک کتاب اور متعدد مضامین شائع کیے ہیں، اور وہ فرانسیسی، ہسپانوی اور انگریزی میں روانی (عربی کے علاوہ) ہیں۔

اس کے تخت پر چڑھنے کے بعد سے؛ شاہ محمد ششم نے بڑی اصلاحات کی قیادت کی جس میں گہری اور ساختی تبدیلیاں آئیں جن میں اقتصادی، سماجی، مذہبی اور قانونی زندگی کے مختلف پہلو شامل تھے، جن کا مقصد جمہوریت کو مستحکم کرنا، قانون کی ریاست اور جدیدیت کی تعمیر، اور انسانی حقوق کو فروغ دینا تھا۔ شاہ محمد ششم نے مراکش میں انتظامی نظام کو جدید بنانے کے لیے مضبوط اشارے دیے، جب انھوں نے کچھ سیاسی قیدیوں کی رہائی کا حکم دیا، اور ان لوگوں کو معاوضہ دینے کے لیے ایک مفاہمتی منصوبہ شروع کیا جسے (لیڈ کے سال) کے نام سے جانا جاتا تھا۔ اپنی حکمرانی کے پہلے سالوں کے دوران، انہوں نے تعلیم اور خواتین کے امور کی ترقی کو بہت اہمیت دی، جس کا باضابطہ طور پر اعلان اس وقت کیا گیا جب انہوں نے 2004 میں نئے عائلی قانون کی منظوری دی، یہ ایک ایسا قانون ہے جو خاندان کے اندر خواتین کے کردار کو مضبوط کرتا ہے اور انہیں نئے حقوق فراہم کرتا ہے۔ حقوق

اس کے تخت پر چڑھنے کے بعد سے؛ شاہ محمد ششم نے بڑی اصلاحات کی قیادت کی جس میں گہری اور ساختی تبدیلیاں آئیں جن میں اقتصادی، سماجی، مذہبی اور قانونی زندگی کے مختلف پہلو شامل تھے، جن کا مقصد جمہوریت کو مستحکم کرنا، قانون کی ریاست اور جدیدیت کی تعمیر، اور انسانی حقوق کو فروغ دینا تھا۔ شاہ محمد ششم نے مراکش میں انتظامی نظام کو جدید بنانے کے لیے مضبوط اشارے دیے، جب انھوں نے کچھ سیاسی قیدیوں کی رہائی کا حکم دیا، اور ان لوگوں کو معاوضہ دینے کے لیے ایک مفاہمتی منصوبہ شروع کیا جسے (لیڈ کے سال) کے نام سے جانا جاتا تھا۔ اپنی حکمرانی کے پہلے سالوں کے دوران، انہوں نے تعلیم اور خواتین کے امور کی ترقی کو بہت اہمیت دی، جس کا باضابطہ طور پر اعلان اس وقت کیا گیا جب انہوں نے 2004 میں نئے عائلی قانون کی منظوری دی، یہ ایک ایسا قانون ہے جو خاندان کے اندر خواتین کے کردار کو مضبوط کرتا ہے اور انہیں نئے حقوق فراہم کرتا ہے۔ حقوق

محمد ششم کے دور کی خصوصیات میں سے جو خصوصیات ہیں، ان میں ماضی کا صفحہ پلٹنا، عبوری انصاف کے تجربے کو کامیاب بنانا، تمام سطحوں اور سطحوں پر جامع ترقی حاصل کرنا، اور کل ان کے دور حکومت میں مراکش ایک ممتاز مقام پر فائز ہے۔ بین الاقوامی اور مراکش کی سطحوں پر، جیسا کہ یہ ایک جدید جمہوری سماجی منصوبے کو قائم کرنے اور حقیقی کامیابیاں حاصل کرنے میں کامیاب رہا۔

2011 میں، مراکش میں عوامی مظاہروں کی ایک مہم شروع کی گئی تھی، جس کی قیادت 20 فروری کی تحریک نے کی تھی، جو 2011 کے اوائل میں مشرق وسطیٰ اور شمالی افریقہ میں پھوٹنے والی مظاہروں کی زبردست لہر، خاص طور پر تیونس کے انقلاب اور مصر کے 25 جنوری کے انقلاب سے متاثر تھی۔ جس نے تیونس کے صدر زین العابدین بن علی اور مصری صدر حسنی مبارک کا تختہ الٹ دیا۔مظاہرین نے سیاسی اصلاحات کا مطالبہ کیا۔اقتصادی اور سماجی، شاہ محمد ششم نے مظاہرین کے مطالبات کا جواب دیتے ہوئے بڑی اصلاحات کا وعدہ کیا، جن میں آزادی اظہار کی آئینی ضمانتیں شامل ہیں۔ خواتین کے لیے مساوات، اور عدلیہ کی آزادی، یہ تخت اور عوام کے درمیان ایک نیا تاریخی معاہدہ ہے۔

شاہ محمد ششم نے اپنی براہ راست قیادت اور نگرانی میں بہت سے بڑے اقتصادی منصوبے شروع کیے، چاہے بنیادی ڈھانچے کے منصوبے ہوں (سڑکیں، بندرگاہیں، ہوائی اڈے، تیز رفتار ریل...)، یا سٹریٹجک شعبوں جیسے زراعت، صنعت اور متبادل توانائیوں کو فروغ دینے کے پروگرام۔ شاہ محمد ششم نے مملکت کے اصل تشخص کو مستحکم کرتے ہوئے مراکش کی نظریاتی بنیادوں کو برقرار رکھنے کے لیے مذہبی میدان میں اصلاحات کا ایک اقدام بھی شروع کیا، جس میں توازن، اعتدال اور رواداری کی خصوصیت ہے۔ سپریم کونسل آف اسکالرز اور اہل اماموں کی تنظیم نو کے ذریعے مذہبی میدان کی تجدید کے لیے کثیر جہتی حکمت عملی۔

2002 میں شاہ محمد ششم نے سلمیٰ بینانی سے شادی کی اور ان کے دو بیٹے تھے: شہزادہ مولائے الحسن، مراکش کی بادشاہی کے ولی عہد، اور شہزادی خدیجہ۔ قابل ذکر ہے کہ وہ کاروں اور فارمولا ون ریسنگ کے لیے اپنے خاص شوق کے علاوہ جیٹ اسکیئنگ، دوڑ اور گھڑ سواری جیسے کئی کھیلوں اور مشاغل کی مشق کرتا ہے، جس کی مشق وہ بچپن سے کر رہا ہے۔ شاہ محمد ششم کو پارلیمانی اداروں اور بین الاقوامی اور غیر سرکاری تنظیموں کی طرف سے بہت سے باوقار اعزازات اور تمغوں سے نوازا گیا ہے، جن میں سب سے مشہور بادشاہوں، صدور اور سینئر سیاستدانوں کی فہرست میں سے دنیا کی بااثر ترین شخصیات کے لیے تمغہ امتیاز ہے۔ ، اور سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی طرف سے فرسٹ ڈگری کا آرڈر آف میرٹ، (ابوبکر) کے ہار کے علاوہ الصدیق)، جو انہیں عرب ہلال احمر اور ریڈ کراس سوسائٹیز کی طرف سے دیا گیا تھا، جن پر غور کیا جاتا ہے۔ انسانی ہمدردی اور خیراتی کاموں میں شاہ محمد ششم کے کردار اور ضرورت مند گروپوں کے ساتھ ان کی یکجہتی کے اعتراف میں تنظیم کا سب سے بڑا اعزاز۔

ذرائع سودھو

  1. Encyclopædia Britannica Online ID: https://www.britannica.com/biography/Muhammad-VI — subject named as: Muhammad VI — اخذ شدہ بتاریخ: ۹ اکتوبر ۲۰۱۷ — عنوان : Encyclopædia Britannica
  2. Diamond Catalogue ID for persons and organisations: https://opac.diamond-ils.org/agent/108269 — subject named as: Mohammed VI, roi du Maroc
  3. Munzinger person ID: https://www.munzinger.de/search/go/document.jsp?id=00000023053 — subject named as: Mohammed VI. — اخذ شدہ بتاریخ: ۹ اکتوبر ۲۰۱۷
  4. ۴.۰ ۴.۱ https://www.maroc.ma/fr/discours-royaux/interview-accord%C3%A9e-par-sa-majest%C3%A9-le-roi-mohammed-vi-au-quotidien-fran%C3%A7ais-%C2%AB-le
  5. ۵.۰ ۵.۱ ۵.۲ https://www.aljazeera.net/encyclopedia/icons/2014/9/4/الملك-محمد-السادس
  6. https://www.youtube.com/watch?v=Yj-QTAH18lc
  7. https://www.quirinale.it/onorificenze/insigniti/11737
  8. https://www.britannica.com/biography/Muhammad-VI
  9. https://www.almaghribia.ma/%D8%AC%D8%B1%D9%8A%D8%AF%D8%A9/0/0/192884.html
  10. https://web.archive.org/web/20211120051114/https://www.skynewsarabia.com/middle-east/1476955-%D8%A7%D9%84%D9%85%D9%84%D9%83-%D9%85%D8%AD%D9%85%D8%AF-%D8%A7%D9%84%D8%B3%D8%A7%D8%AF%D8%B3-%D9%85%D8%BA%D8%B1%D8%A8%D9%8A%D8%A9-%D8%A7%D9%84%D8%B5%D8%AD%D8%B1%D8%A7%D8%A1-%D8%AD%D9%82%D9%8A%D9%82%D8%A9-%D8%AB%D8%A7%D8%A8%D8%AA%D8%A9-%D9%86%D9%82%D8%A7%D8%B4-%D9%81%D9%8A%D9%87%D8%A7
  11. https://web.archive.org/web/20211118074849/https://www.bbc.com/arabic/middleeast-50180556